21

زیک کنگ ٹک ٹاک پر فالوورز کے لحاظ سے اول نمبر پر

ویڈیو ایڈیٹر اور شعبدہ باز زیک کنگ کے تمام پلیٹ فارم پر نو کروڑ بیس لاکھ اور ٹک ٹاک پر فالوور کی تعداد پانچ کروڑ سے زائد ہوچکی ہے۔ اس طرح ٹک ٹاک پر انہیں سب سے زیادہ فالو کیا جاتا ہے۔ فوٹو: فائل

ویڈیو ایڈیٹر اور شعبدہ باز زیک کنگ کے تمام پلیٹ فارم پر نو کروڑ بیس لاکھ اور ٹک ٹاک پر فالوور کی تعداد پانچ کروڑ سے زائد ہوچکی ہے۔ اس طرح ٹک ٹاک پر انہیں سب سے زیادہ فالو کیا جاتا ہے۔ فوٹو: فائل

اوریگون: یوٹیوب اور ٹک ٹاک پر ایڈٹ شدہ جادوئی اور بصری دھوکے والی ویڈیو بنانے والے زیک کنگ کی کم ازکم ایک ویڈیو تو آپ کی نظروں سے گزری ہوگی۔ اب وہ ٹک ٹاک پر سب سے زیادہ فالوور کے حامل شخص ہیں۔ ان کی ہر ویڈیو ایک بٹن دباتے ہی پانچ کروڑ 82 لاکھ افراد تک جاپہنچتی ہے۔

یوں ٹک ٹاک پر ان کے 58 ملین سے زائد فالوور ہیں اور دیگر پلیٹ فارمز کو ملاکر یہ تعداد نو کروڑ 20 لاکھ تک جاپہنچتی ہے۔ اب ٹک ٹاک کی تصدیق گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ نے بھی کی ہے۔

وہ ویڈیو عکس بندی اور شعبدہ بازی سے ویڈیوز بناتے ہیں۔ ان کی پہلی ویڈیو جیڈآئی کٹنز 2011 میں یوٹیوب پر پوسٹ کی گئی تھی۔ اس کےبعد انہوں نے مختصر ویڈیو کے ایک پلیٹ فارم وائن کا رخ کیا اور وہاں بھی تیزی سے مقبول ہوئے۔

وہ اپنی ویڈیوز میں بےجان اشیا کو جاندار بناتے، شیشہ بند گاڑی میں گھستے، کپڑوں سے زندہ جانور برآمد کرتے نظر آتے ہیں۔ انفرادی مثال کی بنا پر یہ ویڈیو تیزی سے مقبول ہوتی ہیں اور دنیا بھر کے تجارتی اداروں نے بھی انہیں اپنی ویڈیوز میں شامل کیا ہے جن میں ترک ایئرلائن بھی شامل ہے۔

کنگ نے ذرائع ابلاغ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ان کی ٹک ٹاک ویڈیو تمام پلیٹ فارم ہی کی طرح ہوتی ہیں۔ میں اپنے اسٹوڈیو میں ویڈیو سازی کے دوران ٹک ٹاک کے لحاظ سے کوئی تبدیلی نہیں کرتا۔ بس خیال رکھتا ہوں کہ ویڈیو شروع سے ہی دلچسپ ہو اور لوگ اسے دیکھتے ہوئے لطف اندوز ہوسکیں۔

ٹک ٹاک پر ان کی ہر پوسٹ کو مجموعی طور پر 15 کروڑ مرتبہ دیکھا جاچکا ہے۔ ان کی ویڈیوز بنانے کے متعلق ناظرین بہت سے سوالات بھی کرتے ہیں۔ اس کے جواب میں 2009 میں انہوں نے اپنے یوٹیوب چینل پر تدریسی ویڈیویوز (ٹیوٹوریلز) کی ابتدا کی تھی تاکہ دوسرے لوگ بھی ایسی ہی ویڈیوز بناسکیں۔ اب تک ہزاروں لوگ ان کے اسباق دیکھ کر ان کی طرح کی ویڈیوز بناچکے ہیں۔

31 سالہ زیک کنگ پورٹ لینڈ میں اپنی بیگم اور دو بچوں کے ساتھ رہتے ہیں۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.