51

بنوں ٹاون شپ میں بنیادی سہولیات کا فقدان، فیز2 ابھی تک بجلی سے محروم

بنوں ٹاون شپ کی جدید رہائشی منصوبے میں سہولیات و ضروریات پوری نہ ہونے کے باعث باشندے پریشان ، گندگی کے ڈھیر ، حفاظتی دیوار ، اسٹریٹ لائٹس ، نکاس آب کا انتظام نہ ہونے ، رہائشی ریٹ پر گیس کی عدم دستیابی اور بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے باعث یہاں رہائش اختیار کرنے والوں نے ٹاون شپ سے ہجرت کرنے کی دھمکی دے دی ، فیز2 ابھی تک بجلی سے محروم ہے. ہر علاقہ اور شہر میں لوگوں کی مشکلات اور ضروریات ہوتی ہیں اور ان کا حل بعض اوقات نا ممکن دیکھائی دیتی ہے صاحب استعداد طبقہ اور سرکاری آفسران اس بنیاد پر اپنے دیہاتوں سے ایسی جگہ پر رہائش اختیار کرنے کو ترجیح دیتے ہیں جہاں ان کیلئے کوئی مشکل نہ ہوں لیکن اگر وہاں پر بھی انہیں صاف شفاف ماحول فراہم نہیں کیا جاتا تو یقینا اُنہیں اپنے مستقل کیلئے سوچنا پڑھتا ہے اس سلسلے میں بنوں ٹاون شپ کے رہائشیوں سے بات ہوئی تو اُن کا کہنا تھا کہ ہمارا سب سے بڑا مسئلہ بنوں ٹاون شپ میں نکاس آب کا ہے ٹاون شپ میں نکاس آب کا انتظام نہ ہونے سے گلیوں اور پلاٹوں میں گندے پانی کے تالاب بن جاتے ہیں جو اس طرف جانے کو بھی دل نہیں کر تا ، گندگی کے ڈھیر بھی پڑے ہیں جو انہیں اُٹھانے والا کوئی نہیں ، اسی طرح بونڈری وال نہ ہونے کی وجہ سے ٹاون شپ میں غیر قانونی راستے بھی نکالے گئے ہیں بنوں ٹاؤن شپ میں ہمیں جلانے کیلئے گیس بھی رہائشی ریٹ کے بجائے کمرشل ریٹ پر مل رہا ہے جس کیلئے ہم نے عدالت میں کیس بھی دائر کیا ہے پشاور ریگی للمہ ٹاون میں بھی اس طرح کا گیس دیا جاتا تھا جو بعد میں اُنہیں ڈومیسٹک ریٹ بھی دیا جانے لگا ہمیں بھی اس طرز پر گیس دیا جائے ، ٹاون کے باشندوں کا کہنا ہے کہ ٹاون کا مطلب بھی یہی ہوتا ہے کہ ایک آمن پسند معاشرہ رہائش پذیر ہو تا ہے اور اُنہیں وہ تمام سہولتیں مہیا ہو تی ہیں جو دیہاتوں میں نہیں ہو تے لیکن بنوں ٹاون شپ تو مسائلستان ہے اسے تو ٹاون نہ کہا جائے تو بہتر ہو گا کیونکہ یہاں پر سڑکیں ٹھیک ہیں نہ صفائی کی صورتحال درست ہے ، تقریبا تمام سیکٹرو ں میں گندگی کے ڈھیر پڑے ہیں نکاس آب کے باعث یہاں مزید شہری رہائش بھی اختیار نہیں کر سکتے کیونکہ جو کوئی پلاٹ خریدنے آ ئے تو پلاٹ میں جب گندے پانی کا تالاب دیکھیں تو سیدھا واپس جا تا ہے ، سکیورٹی نظام بھی تسلی بخش نہیں بنوں ٹاون شپ کے رہائشیوں نے یہ بھی انکشاف کیا کہ ہفتہ اور اتوار کو مامول کی چھٹی ہو تی ہے جبکہ پراجیکٹ ڈائریکٹر جمعہ کو چھٹی پر جاتا ہے اور پھر سوموار کو واپس آ تا ہے ان کے جانے سے ما تحت عملہ بھی جمعہ سے سوموار کے روز تک چھٹی پر ہو تا اسی طرح پورے ہفتہ میں صرف تین روز ڈیوٹی کرتی ہے جو بنوں ٹاون شپ میں عدم صفائی اور دیگر مشکلات کا باعث بن رہا ہے ، رہائشیوں کا کہنا ہے یہ ٹاون 1985 سے بنا ہے لیکن آج تک اس میں سہولیات تو دور کی بات بنیادی ضروریات بھی پوری نہیں کی گئی ہے ہم نے جب یہاں پر رہائش اختیار کی تھی تو ہمیں تمام سہولیات کی دستیابی کا بتایا گیا ہے لیکن کوئی سہولت موجود نہیں اُنہوں نے مطالبہ کیا کہ بنوں ٹاون شپ کو حقیقی ٹاون میں تبدیل کیا جائے اور تمام ضروریات پوری کرکے یہاں سے گندگی کے ڈھیر کی صفائی کی جائے ، نکاس آؓ کا انتظام بہتر بنایا جائے ، حفاظتی دیوار بنائی جائے ، رہائشی ریٹ پر گیس فراہم کیا جائے ، اسٹریٹ لائٹس لگائے جائیں ورنہ ہم تو یہاں سے ہجرت کرنے پر مجبور ہو جائیں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.