18

12 ہزار فٹ بلند چوٹی کو سر کرنے والے معذور کوہ پیما واپسی پر گر کر ہلاک

کم ہانگ بن دنیا کی 14 بلند ترین چوٹیاں سر کرنے والے  پہلے معذور کوہ پیما ہیں، فوٹو: فائل

کم ہانگ بن دنیا کی 14 بلند ترین چوٹیاں سر کرنے والے پہلے معذور کوہ پیما ہیں، فوٹو: فائل

جنوبی کوریا کے معذور کوہ پیما کم ہانگ بن قراقرم میں دنیا کی 12 ویں بلند ترین پہاڑ کی چوٹی سر کرکے واپس آتے ہوئے گر کر ہلاک ہوگئے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق 2007 میں ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے والے جنوبی کوریا کے کوہ پیما کم ہانگ بن الپائن کلب آف پاکستان کی پہاڑی چوٹیاں سر کرنے کی مہم کے مقابلے میں حصہ لے رہے تھے اور اسی دوران براڈ پیک سر کرکے ٹیم کے ہمراہ واپسی کے دوران لاپتہ ہوگئے۔

الپائن کلب آف پاکستان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ جنوبی کوریا کے کوہ پیما قراقرم کے علاقے میں دنیا کے 12 ویں بلند ترین پہاڑ سے گر کر ہلاک ہوگئے۔ ان کی ہلاکت پر دلی رنج ہے۔ اس حادثے نے سمٹ میں شامل تمام کوہ پیماؤں کو افسردہ کردیا ہے۔

پاکستانی کوہ پیما علی رضا سدپارہ نے بھی جنوبی کوریا کے کوہ پیما کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ 57 سالہ کم ہاگن بن کی موت پاک چین سرحد پر واقع ایک چوٹی سر کر کے واپس آتے ہوئے پہاڑ سے گرنے کے باعث ہوئی۔

دنیا کی تمام 14 بلند ترین پہاڑوں کی چوٹیاں سر کرنے پر جنوبی کوریا کے صدر مون جے ای نے گزشتہ روز ہی کوہ پیما کم ہانگ بن کو ایک بیان میں خراج تحسین پیش کیا تھا اور انہیں ملک کے لیے باعث فخر قرار دیا تھا۔

کم ہانگ بن 1991 کو الاسکا میں کوہ ڈینالی پر چڑھنے کے دوران دونوں ہاتھوں کی انگلیاں کھو بیٹھے تھے اس کے باوجود انھوں نے 2007 میں ماؤنٹ ایورسٹ کو بھی سر کیا تھا۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.