21

کیا چین افغانستان میں فوجی اڈہ قائم کر رہا ہے؟

چین شمالی افغانستان میں افغان فوجیوں پر مشتمل ایک پہاڑی بریگیڈ بنانے میں افغانستان کی مدد کر رہا ہے تاکہ شدت پسندی کے خلاف موثر کارروائی کی جاسکے۔

یہ بات بیجنگ میں موجود افغان سفارت خانے نے بتائی ہے۔ تاہم اخبار ساؤتھ چائنا پوسٹ کو بھیجے گئے ایک فیکس میں سفارت خانے نے کہا ہے کہ چینی فوجی کسی بھی مرحلے پر افغانستان کی سرزمین پر تعینات نہیں ہوں گے۔

افغان سفارت خانے نے کہا کہ افغان حکومت چین کی مدد کے لیے اس کی شکرگزار ہے اور دونوں ممالک کی افواج ایک دوسرے سے تعاون کر رہی ہیں۔ تاہم اس تعاون کی مزید تفصیلات نہیں بتائی گئیں۔

اس سے قبل اخبار ساؤتھ چائنا پوسٹ نے دعویٰ کیا تھا کہ اسے چینی فوج کے قریبی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ چین نے افغانستان کے دور افتادہ علاقے واخان میں افغان فوجیوں کی تربیت کے لیے ایک تربیتی کیمپ تعمیر کرنا شروع کیا ہے۔ واخان کی انتہائی دشوار گزار پٹی ساڑھے تین سو کلومیٹر طویل ہے اور یہ افغانستان کے بدخشان صوبے سے لے کر چین کے مسلمان آبادی والے خطے سنکیانگ تک جاتی ہے۔

اخبار نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا تھا کہ جب یہ تربیتی کیمپ تعمیر ہوجائے گا تو چین اپنے فوجی وہاں بھیجے گا، لیکن چین کی وزارت خارجہ کی ترجمان نے اس خبر کی سختی سے تردید کی ہے۔

اخبار کے مطابق ایک فوجی ذریعے نے اسے بتایا کہ کیمپ کی تعمیر مکمل ہونے کے بعد چین کم از کم ایک بٹالین بمع اسلحہ اور دیگر سازوسامان وہاں بھیجے گا تاکہ افغان فوجیوں کی تربیت کی جا سکے۔

افغانستان چین کی سلامتی کے لیے بھی اہم ہو گیا ہے، اور چینی صدر شی جن پنگ کے ایک بڑے منصوبے بیلٹ اینڈ روڈ کے لیے بھی بہت اہم ہے۔ تاہم چین کو سنکیانگ کے خطے سے اسلامی شدت پسندی کا خطرہ بھی رہتا ہے اور حالیہ برسوں میں چین میں متعدد حملے ہو چکے ہیں۔

چین کا کہنا ہے کہ سنکیانگ میں جاری شدت پسندی کا مقصد ملک سے اس خطے کو الگ کرنا ہے۔

چین بین الاقوامی سطح پر اپنا کردار ادا کرنے کے لیے حالیہ برسوں میں بہت سرگرم رہا ہے اور سردست افغانستان، روس اور پاکستان کے ساتھ مل کر افغانستان میں امن کے قیام کے لیے طالبان سے مذاکرات بھی کر رہا ہے۔

چین نے اپنا پہلا غیر ملکی فوجی اڈہ افریقی ملک جبوتی میں گذشتہ برس قائم کیا تھا۔ چین کا اس بارے میں کہنا ہے کہ یہ بحر ہند میں چینی امدادی بحری جہازوں کو رسد فراہم کرنے کے لیے قائم کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.