21

کروڑ پتی بننے کے تین آسان نسخے

آپ کو کیسے معلوم ہو گا کہ کون سا کاروبار کامیاب رہے گا اور کون سا ناکام؟ یہ سوال کسی کے لیے بہت اہم ہو سکتا ہے لیکن کینیڈا کے ریان ہومز کے لیے یہ سوال کوئی راکٹ سائنس نہیں جس کا پتہ لگانا مشکل ہو۔

ریان ہومز ایک سرمایا کار اور سوشل نیٹ ورک اکاؤنٹ کو مینج کرنے والی ویب سائٹ ‘ہوٹ سوٹ’ کے بانی ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ایک کامیاب کاروباری بننے کے لیے کسی خاص ڈگری کی ضرورت نہیں ہوتی بلکہ آپ کو صرف ایک نسخے کی ضرورت ہوتی ہے جس سے آپ یہ پتہ لگا سکتے ہیں کہ آپ کا کسی منصوبہ یا کاروبار میں پیسہ لگانا فائدے مند ثابت ہو گا یا نہیں۔ ہومز کے حساب سے یہ معلوم کرنا کافی آسان ہے۔

نمبر ایک ٹیلنٹ ہے

اچھے کاروباری آئیڈیا آپ کو ہر جگہ مل جائیں گے لیکن ان آئیڈیاز پر عمل کرنے والے باصلاحیت لوگ لاکھوں میں ایک ہوتے ہیں۔

ہومز اپنے بلاگ میں لکھتے ہیں’ کسی بھی کاروبار کا تخمینہ کرنے سے پہلے میں اس کے باس اور ٹیم کو دیکھتا ہوں میرے لیے یہ جاننا ضروری ہے کہ وہ کاروبار کے لیے سنجیدہ بھیں ہیں یا نہیں۔

کیونکہ کاروبار میں سب سے بڑا چیلنج پیسہ لگانے والوں کی رقم کو صفر سے اربوں تک لے جانا ہوتا ہے اور کامیاب ہونے کے لیے ضروری ہے کہ کاروبار کو پورا وقت دیں اور کام کرنے کا طریقہ بھی الگ ہو۔

ان کا کہنا ہے کہ بڑے بڑے کاروباری تمام مسائل کا حل تلاش کرتے ہیں نہ کہ دوسروں کو اس کے لیے پیسے دے دیتے ہیں۔ اچھا کاروباری تب تک آرام نہیں کرتا جب تک مسائل کا حل نہ نکال لے۔

کسی بھی کمپنی کے مالک کو پر جوش اور جفاکش لوگوں کی ضرورت ہوتی ہے۔

نمبر دو ٹیکنالوجی

ہوز کہتے ہیں کہ ٹیکنالوجی کے بارے میں سب سے پہلے سوچیں اور یہ اس وقت سب سے ضروری ہو جاتی ہے جب آپ کا بزنس آئیڈیا ٹیکنالوجی سے جڑا ہو۔

ان کا کہنا ہے کہ بہترین طریقہ یہ ہی ہے کہ ایک شخص کو پوری طرح ٹیکنالوجی سے متعلق کام پر لگایا دیا جائے تاکہ اس سے متعلق مسائل کو فوری طور پر حل کیا جا سکے۔ دوسرا کاروبار کی دوسری چیزوں کو دیکھے۔

نمبر تین لبھانے کا طریقہ یعنی پبلسٹی

کیا آپ کے پاس سرمایہ لگانے والے لوگ یا گاہک ہیں؟ آپ نے کتنا پیسہ کمایا ہے ہومز کا کہنا ہے کہ اگر گپ کے پاس گاہک یا سرمایا لگانے والے ہوں تو یہ بہت اچھا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ سرمایا لگانے والوں کی توجہ حاصل کرنے کا بہترین منصوبہ ہونا چاہیے جس سے آئیڈیا ان تک پہنچایا جا سکے۔ کاروبار کی کامیابی کے لیے ایسا سافٹ ویئر بنایا جانا چاہیے جو آپ کے پراڈکٹ کو وائرل کر دے یا پھر اس کے اشتہارات پر زور دیا جائے۔

ہومز کا کہنا ہے کہ ٹرپل ٹی کا یہ فارمولہ کامیابی کی ضمانت نہیں کئی بار صحیح تکنیک اور اچھی ٹیم کے باوجود بھی کاروبار ناکام ہو جاتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.