49

نصرت سحر نے شہلا رضا کو اسمبلی میں جوتا دکھا دیا

سندھ اسمبلی کے اجلاس میں بجٹ پر بحث کے دوران اپوزیشن کا شور شرابا، نصرت سحر عباسی کے جوتا دکھانے پر شہلا رضا نے انہیں ایوان سے باہر نکالوا دیا ۔

سندھ اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی اسپیکر شہلا رضا کی سربراہی میں ہوا جس میں ممتاز جاکھرانی بجٹ پر بحث کررہے تھے۔

انہوں نےمسلم لیگ فنکشنل کی رکن نصرت سحر عباسی کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئےکہا کہ نصرت سحر عباسی ایوان میں شور شرابا کرتی ہیں اور یہ نہیں بتاتیں کہ انہوں نے پیپلزپارٹی سےکتنے فائدے لیے۔

ممتاز جاکھرانی نےالزام لگایا کہ نصرت سحر نے گیان چاند سے باردانے کی بوریاں لیں، وہ پی پی کا کھاکر بھی الزام لگاتی ہیں۔

ممتاز جاکھرانی کے الزامات پر نصرت سحر عباسی شدید طیش میں آگئیں اور ایوان میں شور شرابا شروع کردیا، اس پر ڈپٹی اسپیکر شہلا رضا نےکہا کہ آپ ہماری قیادت پر اس طرح کے الفاظ استعمال کرتی ہیں لیکن اپنے اوپر کچھ برداشت نہیں کرتیں۔

شہلا رضا کے ٹوکنے پر نصرت سحر عباسی غصے میں آگئیں اور پاؤں اوپر کرکے ڈپٹی اسپیکر کو جوتا دکھایا جس پر شہلا رضا شدید برہم ہوگئیں اور ایوان میں موجود سارجنٹ کو نصرت سحر کو اسمبلی سے باہر نکالنےکا حکم دیا اس پر سارجنٹ نےانہیں ایوان سےباہر نکال دیا۔

اس دوران اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار نے تقریر کی اور ڈپٹی اسپیکر کو ان کے نام سےمخاطب کیا اس پر شہلا رضا نے خواجہ اظہار الحسن کو بھی ڈانٹ دیا اور تنبیہ کرتےہوئے کہا کہ آپ میرا نام تمیز سے لیں شہلا شہلا نہ کریں۔

ڈپٹی اسپیکر شہلا رضا نے کہا کہ سچ سننے میں ن لیگی ارکان کو بہت تکلیف ہوتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سچ آہستہ آہستہ کاٹتا ہے، ن لیگ والےسچ سننے کو تیار نہیں ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.