36

ناصرخان کی قیادت میں جے یو آئی ف کے کارکنوں کی پی ٹی آئی میں شمولیت

سابق ایم این اے اور پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما ملک ناصر خان کی قیادت میں جے یو آئی ف کے اہم خاندان پی ٹی آئی میں شامل ہوگئے جہانگیر للوزئی سورانی میں منعقدہ شمولیتی تقریب میں حاجی عثمان اور فرید اللہ نے بمع خاندان اور ساتیوں جے یو آئی ف سے مستعفی ہوکر پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا شمولیتی تقریب سے پی ٹی آئی کے ڈسٹرکٹر ممبر ملک عصمت اللہ خان،ریجنل رہنما محمد عالم خان،سابقہ ڈسٹرکٹ ممبر امیدوار حاجی ملک فلک ناز خان ،ویلج کونسل ناظم کوٹی سادات انعام اللہ خان اعزا زسکندری،ڈسٹرکٹ ممبر عالمگیر خان ،وقار سورانی اور شریف زمان نے بھی خطاب کیا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سابق ایم این اے اور پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما ملک ناصر خان نے کہا کہ 2013الیکشن سے پہلے پی ٹی آئی کو بچوں کا جماعت کہنے والے تمام سیاستدان آج عمران خان کے نام سے بھی کانپ رہے ہیں کیونکہ عمران خان نے 20سال پہلے کہا تھا کہ میرے وٹر 20سال بعد جوان ہوں گے اور ملک میں پی ٹی آئی کو اقتدار دیں گے آج وہ بات سچ ثابت ہوئی ہے اور تحریک انصاف سونامی سے سونامی پلس بن گیا ہے جسکے سامنے کرپٹ سیاستدان نہیں ٹہر سکتے انہوں نے کہا کہ عمران خان ہی مستقبل کے وزیر اعظم ہوں گے کیونکہ پاکستان کے نوجوان عمران خان کے ساتھ ہے انہوں نے مولانا فضل الرحمن اور انکی جماعت پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ 70سالوں سے یہ لوگ اسلام کے نام پر اسلام آباد کی سیات کررہے ہیں لیکن اسلام کیلئے ایک بھی کام نہیں کیابلکہ الٹا قومی اسمبلی اور سینٹ میں ختم نبوت بل میں ترمیم پر حکومت کا ساتھ دیا اور بعد میں کہا کہ یہ اجتماعی غلطی ہوئی ہے خود وزارتوں کے مزے لے رہے ہیں کشمیر کمیٹی کے15سالوں سے چیئرمین ہیں اور کشمیر کیلئے ایک لفظ نہیں بولے جبکہ پی ٹی آئی نے علماء کرام کیلئے ماہانہ حق حلال کا سرکاری اعزازیہ مقرر کیا تو انکے پیٹ میں مروڑ اٹھ رہا ہے اور خود سرکاری مراعات لینے کے باوجود علماء کرام کو ماہانہ10ہزار روپے لینے سے روک رہے ہیں لیکن عوام اب باشعور ہوچکے ہیں اور عام لوگوں اور بڑے بڑے سیاستدانوں کے علاوہ مفتی اور علماء کرام بھی تحریک انصاف میں شمال ہورہے ہیں جبکہ مولانا سمیع الحق اور دیگر مذہبی جماعتیں بھی تحریک انصاف کے اسلام دوست پالیسیوں کی وجہ سے پی ٹی آئی کے ساتھ اتحاد کررہی ہیں کیونکہ اسلام کے نام پر سیاست کرکے جائیدادیں سیاسی علماء کرام نے بنائیں جبکہ اسلام کیلئے قانون سازی خیبر پختونخوا میں پی ٹی آئی نے کی جن میں حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی شہادت اور اسلامی سال کے آغاز پر عام تعطیل،سود پر پابندی،ناجائز جہیز پر پابندی،نرسری سے پانچویں جماعت تک سکولوں میں ناظرہ قرآن اور بارہویں جماعت تک قرآن باترجمہ لازمی قرار دینا مساجد کے علماء کرام کیلئے ماہانہ 10ہزار روپے وظیفہ مقرر کرنا،مساجد کو سولر سسٹم فراہم کرنا،غریب عوام کو صحت کارڈ کے ذریعے ساڑھے پانچ لاکھ روپے تک مفت علاج معالجے کی سہولیات فراہم کرنا،پولیس کو سیاسی مداخلت سے پاک کرنا،پٹوار اور تھانہ کلچر تبدیل کرنا،صحت اور تعلیم کے میدان میں اصلاحات اور بدیاتی نظام کے تحت گھر گھر ترقیاتی کاموں کا جال پہنچانے سمیت بے شمار ایسے اقدامات شامل ہیں جس سے سیاسی مداریوں کی دکانداری بند ہوگئی ہے کرپشن پر نوازشریف کو گھر بھیج دیا ہے اور کارکردگی کی بنیاد پر مرکز سمیت چاروں صوبوں میں تحریک انصاف کی حکومتٰن بنیں گی اس موقع پر انہوں نے پارٹی میں شمال ہونے والوں کو پارٹی ٹوپیاں پہناکر پارٹی میں شمولیت پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس فیصلے پر کبھی نہیں پچھتائیں گے اور الیکشن تک مذید ہزاروں لوگ پی ٹی آئی میں شمولیت کے اعلانات کریں گے۔اور اگر اللہ تعالیٰ نے موقع دیا تو عوام کو حقوق گھر کی دہلیز پر پہنچائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.