84

مولانا نسیم علی شاہ کی انتخابی مہم کا باقاعدہ افتتاح

این اے35بنوں کے ضمنی الیکشن کیلئے پاکستان تحریک انصاف کے نامزد امیدوار برائے قومی اسمبلی مولانا سید نسیم علی شاہ نے اپنے انتخابی مہم کا باقاعدہ افتتاح جامعہ المرکز الاسلامی میں علماء کرام،ڈسٹرکٹ وتحصیل ممبران،پی ٹی آئی کارکنوں اور مشران کے جلسہ سے کیا جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے مولانا نسیم علی شاہ نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے این اے35کا ٹکٹ مجھے دیکر علماء کرام پر بہٹ بڑا اعتماد کیا ہے.
این اے35کیلئے عمران خان کی جانب سے میری نامزدگی بنوں کے علماء کرام کیلئے ایک اعزاز ہے جس پر میں بنوں کے علماء کرام کی طرف سے وزیر اعظم عمران خان کا شکریہ ادا کرتا ہوں کیونکہ ایک طرف جمیعت علماء اسلام ہے جو کہ ہمیشہ علماء کے نام پر سیاست کررہی ہے لیکن الیکشن میں علماء کرام کو نظر انداز کرکے ایک مخصوص خاندان کو ٹکٹ دیتی ہے ارو اگر انکے خاندان سے ٹکٹ نکل بھی جاتا ہے تو کسی عالم دین کو نہیں بلکہ سرمایہ دار کو ٹکٹ دیا جاتا ہے،انہوں نے کہا کہ عمران خان نے مجھ سے ملاقات کے دوران انتہائی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں علماء کرام کی ضرورت ہے کہ علماء کرام ہماری ٹیم میں شمال ہوجائے اور اسمبلی فلور پر اسلامی قوانین،اسلامی اصلاحات اور اسلامی اقدامات کے سلسلے میں ہماری ٹیم کا حصہ بنیں اور ہماری رہنمائی کریں اور اس حوالے سے میں نے پاکستان کے نامور دینی مدارس کے علماء کرام سے بھی رابطہ کیا تو انہوں نے بھی اس پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے مجھے پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑنے کا مشورہ دیا تاکہ اسمبلی میں علماء کرام کی موجودگی میں علماء کرام اسلامی اقدامات کے حوالے سے تحریک انصاف حکومت کی رہنمائی کریں انہوں نے کہا کہ جے یو آئی 30سالوں سے اقتدار میں ہے اور اس دوران بنوں کو سی پیک سڑک سے محروم کرنے،دوسرے قومی حلقہ اور ہائی وے روڈ سے محروم کرنے کی ذمہ دارجے یو آئی ہے انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ 25جولائی کی طرح14اکتوبر کو بھی بیٹ پر مہر لگاکر بنوں کی تعمیر وترقی اور اسلامی اقدامات کیلئے تحریک انصاف کا ساتھ دیں اور مذید کسی کے جھوٹے نعروں میں نہ آئیں انہوں نے کہا کہ سابق ایم این اے ملک ناصر خان سمیت ادنیٰ سے اد نیٰ ٰ کارکن کو بھی منانے کیلئے جرگہ کروں گا اور تمام شرائط تسلیم کروں گا تاکہ عمران خان کو انکی چھوڑی ہوئی نشست دوبارہ تحفے میں دے سکیں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ممبر ملک شکیل خان نے کہا کہ ہم پی ٹی آئی میں اختلافات ختم کرنے کیلئے آئے ہیں تاکہ ملک ناصر خان سمیت تمام نظریاتی کارکنوں اور ڈسٹرکٹ وتحصیل ممبران کو ایک ہی پلیٹ فارم پر جمع کرکے مخالفین کو شکست دے سکیں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کے ضلعی صدر مطیع اللہ خان،ضلعی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر ملک گلباز خان،ضلعی جنرل سیکرٹری حاجی وحید خان،آصف الرحمن،شب نیاز خان،خالد خان،مولانا راقیاز ودیگر مقررین نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت میں نئے پاکستان کو ترقی کرنے اور اسلام کا قلعہ بنانے سے کوئی طاقت روک نہیں سکتی ہے جے یو آئی نے 70سال اسلام کے نام پر سیاست کی اور جب بھی حکومت میں آئی ہے اسلام کا نام تک نہیں لیا جبکہ مرکز میں حکومتوں کے ساتھ اتحاد کے وقت اسلام کیلئے نہیں بلکہ وزارتوں کیلئے اتحادکیا ہے اب انشاء اللہ تحریک انصاف کی حکومت میں بنوں کے تمام یونین کونسلوں کو گیس،پانی،بجلی اور ترقیاتی کام ملیں گے عمران خان حالیہ انتخابات میں بنوں کے نتائج سے انہتائی خوش ہے اور وہ بنوں کے عوام کو انشاء اللہ بہت بڑا حصہ دیں گے تحریک انصاف کی سابقہ حکومت میں اسلام کے حوالے سے جو قوانین منظور ہوئے ہیں اور جو اسلامی اقدامات کئے گئے ہیں اس کا نتیجہ ہے کہ آج علماء کرام پی ٹی آئی میں جوق درجوق شامل ہورہے ہیں اور انشاء اللہ پی ٹی آئی کے پانچ سالہ دو حکومت میں جے یو آئی کے تمام نظریاتی علماء کرام پی ٹی آئی میں شامل ہوں گے اور علماء کی رہنمائی میں پاکستان اسلام کو مضبوط قلعہ بنے گا اس موقع پی ٹی آئی کے صوبائی رہنما حاجی حمید خان،قاری اسماعیل،مولانا شہزاد،ناظمین ایسوسی ایشن کے ضلعی صدر ملک خالد ریاض خان،ملک حزب اللہ خان،احمد نواز سکندری،ڈسٹرکٹ ممبر جنید الرشید،تحصیل ممبر ڈاکٹر فرید،انور خان وزیر ،حاجی ملک گل خان منڈان،ملک گل بہادر خان،تحصیل ممبر معصوم وزیر اور ملک شوال نور سمیت کثیر تعداد میں پی ٹی آئی کے قائدین ا ور علماء کرام بھی موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.