42

ماں بننے والی کھلاڑیوں کی رینکنگ محفوظ رکھنے کی’مخالفت‘

امریکہ کی ٹینس سٹار سرینا ولیمز کے گرینڈ سلیم جیتنے سے شاید ہی ان کی ساتھی کھلاڑی اس بارے میں رضامند ہوں کہ ماں بننے کے بعد واپس آنے والی کھلاڑیوں کی رینکنگ یا سیڈنگ کو برقرار رکھا جائے۔

خواتین کھلاڑیوں کی ٹینس ایسوسی ایشن (ڈبلیو ٹی اے) اس بارے میں اپنی اراکین کی رائے جاننے کی کوشش کر رہی ہے اور ایک معروف کھلاڑی نے بی سی کو بتایا کہ اس حوالے سے فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

ڈبلیو ٹی اے کے چیف ایگزیکٹو سٹیو سائمن کا کہنا ہے کہ تنظیم تبدیلی کے لیے ’کھلی‘ ہے لیکن ’ہر آواز سننے کی ضرورت ہے کیونکہ کسی بھی تبدیلی کو ہمارے کھلاڑیوں کی مکمل اتفاق رائے کی ضرورت ہوتی ہے۔‘

سٹیو سائمن کا مزید کہنا تھا کہ میں نے یہ سنا ہے کہ بیشتر لڑکیاں رینکنگ یا سیڈنگ کو محفوظ رکھنے کے حق میں نہیں ہیں اور میں بھی ان میں سے ایک ہوں۔

ڈبلیو ٹی اے کے چیف ایگزیکٹو نے کہا ’میں واقعی نہیں سوچتا کہ جب آپ تقریباً دو سال کے بعد کھیل میں واپس آ رہے ہوں تو آپ کی رینکنگ یا سیڈنگ کو محفوظ رکھا جائے کہ آپ کہاں تھے کیونکہ وقفے کے بعد آپ کی فارم مختلف ہے۔ وہاں دوسری لڑکیاں بھی فارم میں ہیں اور اپنا بہترین کھیل پیش کر رہی ہیں۔

سرینا ولیمز نے گذشتہ روز منگل کو فرینچ اوپن کے پہلے راؤنڈ کے مقابلوں میں چیک ریپبلک کی کرسٹیانا پلسکوا کو شکست دی تھی۔ یہ سرینا ولیمز کی ماں بننے کے بعد تیسری جیت تھی۔

خیال رہے کہ سرینا ولیمز نے گذشتہ سال دو ستمبر کو فلوریڈا کے ایک ہسپتال میں ایک بیٹی کو جنم دیا تھا۔

23 بار گرینڈ سلیم جیتنے والی ٹینس سٹار نے سنہ 2017 میں حاملہ ہونے کے باوجود آسٹریلین اوپن میں گرینڈ سلیم میں فتح حاصل کی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.