47

ضلع بھر میں سیکورٹی ہائی الرٹ، حساس مقامات کی نگرانی سخت

انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخواہ ڈاکٹر محمد نعیم خان کے احکامات پر ڈسٹر کٹ پولیس آفیسر یاسر آفریدی نے بنوں میں سیکورٹی ہائی الرٹ،حساس مقامات کی نگرانی سخت کردی۔بنوں سکیورٹی ہائی الرٹ کرکے حساس مقامات خصوصا اقلیتوں کی عبادت گاہوں کی نگرانی کا عمل مزید تیز کردیا گیا ہے حفاظتی انتظامات بڑھا دئے گئے ہیں اور پولیس کی اضافی نفری تعینات کردی گئی ہے۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر یاسر آفریدی کے خصوصی احکامات کی روشنی میں موجودہ حالات خصوصا نیوزی لینڈ میں مسجد پر حملے کے واقعہ کے پیش نظر بنوں میں سکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی ہے۔بنوں شہر میں واقع اقلیتوں کی عبادت گاہوں کے گرد سکیورٹی حصار کو مزید موثر و متحرک کردیا گیا ہے اور حساس مقامات کی طرف جانیوالے تمام راستوں کی سخت ناکہ بندی کرکے چیکنگ کا عمل بڑھا دیا گیا ہے۔اقلیتوں کی عبادت گاہوں کے احاطے میں واک تھرو گیٹ اور سی سی ٹی وی کیمرے نصب کرکے چیکنگ کا عمل مزید مؤثر بنانے کی خاطر لیڈی پولیس،بم ڈسپوزل اسکواڈ،K.9 یونٹ کے اہلکاروں کی بھی خدمات بھی حاصل کرلی گئی ہیں۔مخصوص ایام میں مذہبی رسومات کی ادائیگی کیلئے اقلیتوں کی عبادت گاہوں میں آنے والے اقلیتی برادری کو تحفظ فراہم کرنے کے غرض سے چارج کی طرف جانیوالے تمام راستوں پر عارضی ناکہ بندی بھی قائم کر دی گئی ہے اور اقلیتوں کی عبادت گاہوں کو اضافی سکیورٹی بھی فراہم کر دی گئی ہے۔ ڈسرکٹ پولیس آفیسر کا کہنا ہے کہ جملہ مسلم، غیر مسلم عبادت گاہوں کی سکیورٹی بڑھا کر جس کا مقصد جان، مال کی تحفظ ہے۔کیونکہ پولیس کے اولین فرائض میں عوام کی جان، مال کی تحفظ کرنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.