18

شکست جے یو آئی کا مقدربن گیا ہے: ملک ناصر

این اے35کے ضمنی الیکشن کیلئے پی ٹی آئی کے امیدوار ملک ناصر خان نے ضلع بنوں کے49یونین کونسلوں کے ڈسٹرکٹ وتحصیل ممبران اور پی ٹی آئی کے عہدیداروں سمیت مشران کے جرگے سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ضمنی الیکشن میں بھی شکست جے یو آئی کا مقدر بنے گی میرے مقابلے میں سابق وزیر اعلیٰ اکرم خان درانی کے فرزند 25جولائی کو بھی پی ٹی آئی کے ہاتھوں بری شکست کھاچکے ہیں.
اس مرتبہ این اے35پر اسے بھی برا خشر ہوگا جے یو آئی نے مولانا فضل الرحمن کو بنوں سے الیکشن نہ لڑنے کا مشورہ دیکر ثابت کردیا کہ بنوں میں پی ٹی آئی کا مقابلہ کرنا انکے بس کی بات نہیں کیونکہ مرکز اور صوبوں میں پی ٹی آئی کی حکومتیں بننے کے بعد عوام کی نظریں تحریک انصاف پر لگی ہوئی ہیں این اے35ضمنی الیکشن کا ٹکٹ کے ٹکٹ کا گرین سگنل قائدین نے دیا ہے اور انتخابی مہم شروع کرنے کی بھی ہدایت کی ہے صرف اعلان باقی ہے لیکن اگر پھر بھی قائدین کسی اور کو ٹکٹ دیتے ہیں تو میں ایک سپاہی کی طرح اسے بھی سپورٹ کروں گا مخالفین کسی خوش فہمی میں نہ رہیں پی ٹی آئی میں کسی قسم کے اختلافات نہیں ٹکٹ مانگنا ہر ورکرکا حق ہے کیونکہ تحریک انصاف ایک جمہوری پارٹی ہے اکرم خان درانی پی کے90پر غیر قانونی طریقے سے ایک بچے سے صرف28ووٹوں سے جیتے ہیں،جسکے خلاف ہم نے کیس دائر کیا ہے اور 10تاریخ کو عملہ اور اکرم درانی کو طلب کرلیا گیا انشاء اللہ فیصلہ ملک عدنان خان کے حق میں آئیگا اور اکرم درانی کو جلد اسمبلی سے گھر بھیج دیں گے مولانا فضل الرحمن دھاندلی کا رونا چھوڑ دیں یا پھر علی امین گنڈا پور کا چیلنج قبول کرتے ہوئے دوبارہ علی امین کے مقابلے میں الیکشن لڑ کر دکھائیں اس مربہ انہیں 60ہزار ووٹوں سے شکست ہوگی جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ممبران ملک شکیل خان،پیر خان بادشاہ،ملک میر شمد خان،ملک عصمت اللہ خان،ظفران خان،عبدالرزاق خان،حلیم زادہ وزیر،حاجی ملک شیر بہادر خان،ملک ظفر حیات خان،انصاف یوتھ ونگ کے ضلعی صدر ملک سلیمان غزنوی،سابقہ امیدواران صوبائی اسمبلی ملک زاہد اللہ وزیر،آصف الرحمن،پی ٹی آئی کے ضلعی صدر مطیع اللہ خان،تحصیل ممبران ملک خالد خان،معصوم وزیر،سجاد خان،امتیاز خان،سابقہ امیدوار صوبائی اسمبلی ملک عدنان خان،ملک نظیف خان،ملک شاہ عالم خان،گل نائب بکاخیل،سابقہ امیدوار ملک فلک ناز سورانی،اسحاق جون،انتظار میرزاخیلوی،حافظ مولانا عبدالستار،مفتی وہاب ایڈوکیٹ،افضل کامران،ناصر خٹک،فرہاد خان ودیگر رہنماؤں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے کارکن متحد ہیں پارٹی جس امیدوار کو بھی ٹکٹ دیگی تمام کارکن اسے سپورٹ کریں گے اور گذشتہ الیکشن کی غلطیاں نہیں دہرائی جائیں گی 14اکتوبر کو جیت پی ٹی آئی کا مقدر بنے گی مولانا فضل الرحمن ایک طرف دھاندلی اور خلائی مخلوق کی بات کرتے ہیں دوسری طرف ہر طریقے سے اسمبلی میں گھسنے کی کوششوں میں لگے ہوئے ہیں لیکن انشاء اللہ جب تک پی ٹی آئی ہے وہ کونسلر کا الیکشن بھی نہیں جیت سکیں گے اور انکی سیاست ختم ہوچکی ہے۔پی ٹی آئی کا ٹکٹ جس کا ووٹ اسی کا ہوگا اور جیت بھی انشاء اللہ اسی کی ہوگی۔کارکن ملک ناصر خان یا ٹکٹ ہولڈر کا الیکشن ایسے چلائیں گے جیسے خود الیکشن لڑ رہے ہیں اور ہر یونین کونسل کے عہدیدارا ور ذمہ داران سمیت منتخب نمائندے پارٹی امیدوار کا مہم بھرپور طریقے سے چلائیں گے اور جیت کر دکھائیں گے۔مقررین نے ملک ناصر خان کو این اے35کیلئے موزوں امیدوار قرار دیتے ہوئے بھرپور حمایت کا اعلان بھی کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.