40

خوجڑی ا قوم نے دو خواتین کے قتل کے ملزمان کو پولیس کے حوالے کردیا

خوجڑی ا قوم نے ککی میں دو خواتین کے قتل کے الزام میں نامزد ملزمان کو جرگے میں پولیس کے حوالے کردیا چیف آف خوجڑی اور عوامی نیشنل پارٹی تحصیل ککی کے صدر وسابقہ ڈسٹرکٹ کونسلر ملک شیروز خان کی سربراہی میں خوجڑی اقوام کے مشران نے قومی جرگہ میں ڈی ایس پی سرداد خان اور ایس ایچ او تھانہ ککی معین اللہ خان کی موجودگی میں ایف آئی آر میں نامزد تین ملزمان میں سے دو ملزمان صدرت اللہ اورسعید الرحمن ساکنان میر کلام خوجڑی کو پولیس کے حوالے کیا.
چیف آف خوجڑی ملک شیروز خان نے جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 21ستمبر کو شہباز ککی میں رات کے وقت نامعلوم ملزمان نے گھر میں گھس کر اندھادھند فائرنگ کرکے ماں بیٹی کو قتل جبکہ دو بچوں سمیت تین افراد کو زخمی کیا تھا جسکی دعویداری تین ملزمان پر کردی گئی اور اس واقعے پر ہمارے دل خون کے آنسو رورہے ہیں تاہم قوم کے جرگے میں والی خان نے اعلان کیا کہ ان کا خاندان نہ تو اس قتل میں ملوث ہے نہ ہی اس قتل میں ان کا مشورہ شامل ہے اور نہ ہی کسی قسم کی معلومات ہیں جسکی صفائی میں قرآن پر دینے کیلئے بھی تیار ہوں اور اگر کسی پر بھی یہ جرم ثابت ہوا تو سب سے پہلے انہیں میں گولی ماروں گا کیونکہ قتل ہونے والی خواتین میں ایک میری بہن اور دوسری میری بھانجی ہے جبکہ تیسرا نامزد ملزم آج تک غائب ہے جسکی ہ میں معلومات نہیں اورجب ان سے ہمارا رابطہ ہوگا تو اس بارے میں بعد میں قوم کو آگاہ کریں گے ملک شیروز خان نے کہا کہ اسی نیت سے ہم ان ملزمان کوپولیس کے حوالے کررہے ہیں کہ پولیس بھی انصاف کے تقاضے پورے کریگی اور اگر یہ دونوں قتل میں ملوث نہیں تو ان کے ساتھ نا انصافی نہیں ہوگی جرگہ سے قاری شفیع اللہ نے بھی خطاب کیا اور کہا کہ ککی میں جو ظلم ہوا ہے اس پر ہر کوئی غمزدہ ہے جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے ڈی ایس پی سرداد خان نے قوم کو یقین دہانی کرائی کہ پولیس اس کیس میں کسی بے گناہ کے ساتھ نا انصافی نہیں کریگی اور جو بھی قتل میں ملوث ہوا ان سے کوئی رعایت نہیں کی جائیگی انہوں نے پولیس کے ساتھ تعاون کرنے پر ملک شیروز خان سمیت خوجڑی قوم کے مشران کا شکریہ ادا کیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.