52

تین روز میں جوتا مارنے کا دوسرا واقعہ، عمران خان نشانے پر

گذشتہ تین روز میں سیاسی رہنماؤں پر جوتا پھینکنے کا دوسرا واقعہ منگل کو پنجاب کے شہر گجرات میں پیش آیا جب پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان جلسے سے خطاب کر رہے تھے۔

گجرات میں پی ٹی آئی کے جلسے میں عمران خان کی تقریر کے دوران کسی نے جوتا اچھال دیا جو ان کے برابر میں کھڑے علیم خان کو لگا۔

پی ٹی آئی کی جانب سے گجرات میں رکن سازی جلسہ منعقد کیا گیا تھا۔ جب یہ واقعہ پیش آیا عمران خان اور علیم خان گاڑی کی چھت پر کھڑے تھے۔

’ کئی جوتے پھینکے گئے، یہ ایک منظم واقعہ لگتا ہے‘

عمران خان کے خطاب کے دوران جوتا اچھالا گیا جو عمران کے برابر کھڑے علیم خان کے سینے پر جا لگا۔ اس واقعے کے کچھ دیر بعد عمران خان تقریر ختم کر کے دونوں رہنما گاڑی کی چھت سے نیچے اتر گئے۔

مقامی میڈیا میں چلنے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جیسے ہی علیم خان کو جوتا لگا تو سکیورٹی کا ایک اہلکار علیم خان کے سامنے آ گیا۔

یاد رہے کہ اتوار کو لاہور میں دینی درسگاہ جامعہ نعیمیہ میں سابق وزیر اعظم نواز شریف پر ایک نہیں کئی جوتے پھینکے گئے اور جوتے پھینکے والے طلبا ’لبیک لبیک‘ کے نعرے لگاتے رہے۔

جامعہ نیعمیہ میں ہونے والی اس تقریب میں شریک سینیئر صحافی سہیل وڑائچ نے بی بی سی اردو سروس کو بتایا کہ وہ اس واقع کے چشم دید گواہ ہیں اور انھیں لگا کہ یہ ایک منظم واقعہ تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹAFP
بعد ازاں مفتی راغب نعیمی نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے متعلقہ حکام اور سکیورٹی ایجنسیز سے مطالبہ کیا کہ اس واقعے کی مکمل تحقیقات کی جائیں اور ان عناصر کو بے نقاب کیا جائے جو اس واقعے میں ملوث ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید سمیت تمام رہنماؤں کی جانب سے اس واقعے کی مذمت کی گئی تھی۔

قبل ازیں وزیر خارجہ خواجہ محمد آصف پر ایک تقریب کے دوران ایک شخص نے سیاہی پھینک دی تھی۔ تاہم انھوں نے ملزم کو معاف کرتے ہوئے رہا کرنے کا حکم دیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.