40

بنوں میں پولیو کے قطرے پلانے سے انکاری والدین کی تعداد میں کمی

ضلع بنوں میں پولیو کے قطرے پلانے سے انکاری والدین کی تعداد میں کمی،ضلعی انتظامیہ ، محکمہ صحت اور سول سوسائٹیز کی مشترکہ کوششوں سے انکاری والدین کی تعداد 8 ہزار سے کم ہوکر 3 ہزار رہ گئی پولیو ایک قومی کاز ہے بنوں سے پولیو کے خاتمے کیلئے انکاری والدین کو منانے کیلئے کوششیں جاری ہیں۔
ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر حمید الرحمن داوڑ نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ پولیو وائرس ایک مہلک مرض ہے جس سے نہ صرف ہمارے بچوں کا مستقبل داو پر ہے بلکہ ہمارے ملکی ساکھ کو بھی نقصان پہنچ رہا ہے ماضی میں انکاری والدین اور پولیو ورکرز کے مابین فیک فنگرز کی گٹھ جوڑ بنی تھی جس کی وجہ سے اس وقت میں میں 28 کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں جس پر ڈیوٹی میں غفلت برتنے والے اہلکاروں کو سزائیں بھی دی جا چکی ہیں انہوں نے کہا کہ اب انکاری والدین کو منانے کیلئے حکومتی پالیسی تبدیل ہوکر ان میں شعور اجاگر کیا جا رہا ہے جس کیلئے ضلعی انتظامیہ اور علاقہ عمائدین سے مل بیٹھ کر کھلی کچہریوں کے ذریعے والدین کو منانے کی کوشش کی جا رہی ہے جس کے بہتر نتائج سامنے آئے ہیں کیونکہ حالیہ پولیو مہم میں 8 ہزار انکاری والدین کی تعداد کم ہوکر 3 ہزار رہ گئی ہے جس کی وجہ سے ہم نے سو فیصد اپنا ٹارگٹ پورا کرلیا ہے انہوں نے کہا کہ ہم نے انکاری والدین کو منانے کیلئے ایک منظم پلان بنایا ہے انشائ اللہ فروری میں شروع ہونے والے پولیو مہم تک ہم ان پر کافی قابو پالیں گے کیونکہ بنوں میں علمائ کرام ، علاقہ عمائدین اساتذہ کرام اور دیگر شعبہ جات سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی مدد سے انہیں منانے کی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ پولیو مہمات کی کامیابی کیلئے تمام تر ٹیموں کو ٹریننگ دی گئی ہیں جو کہ آنے والے مہمات میں اپنی تمام تر توانائیاں خرچ کریں گے 09-01-20/–251 #h# ج*انصاف کے بول بالا سے غریب کا احساس محرومی کم ہو گا:خرم نواز گنڈاپور پ*سانحہ ماڈل ٹائون کیس میں کارکن ناکردہ گناہوں کی سزا بھگت رہے ہیں #h# _ لاہور (آن لائن) پاکستان عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈاپور نے سانحہ ماڈل ٹائون کیس کے اسیر عبدالحمید کے والد کے انتقال پر دلی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی بخشش کے لیے دعا کی ہے،انہوں نے اپنے تعزیتی بیان میں کہا کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کے درجات بلند فرمائے اور سوگوار خاندان کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق دے۔

دریں اثناء خرم نواز گنڈاپور نے گزشتہ روز اپنے دفتر میں کارکنوں کے وفود سے ملاقات کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹائون کیس سے متعلق اسیران اور انصاف کے طلبگار ورثاء پانچ سال سے زیادتیاں برداشت کررہے ہیں ،انہیں اس غیر منصفانہ نظام میں انصاف نہیں مل رہا، انہوں نے کہا کہ تحریک منہاج القرآن اور پاکستان عوامی تحریک کے ہر کارکن کا یہ عزم ہے کہ ہم مظلوموں کو انصاف دلوا کر ہی دم لیں گے، انہوں نے کہا کہ اس وقت کارکنان کی ایک بڑی تعداد پولیس کے درج کیے گئے جھوٹے مقدمات کے باعث جیلوں میں بند ہے اور ناکردہ گناہوں کی سزا بھگت رہی ہے، ہماری عدلیہ سے استدعا ہے کہ وہ بے گناہ کارکنان کی رہائی کے احکامات دے۔
اس حوالے سے اپیلیں متعلقہ عدالتی فورمز پر زیر سماعت ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسیران کو انصاف ملنے سے عوام کا عدلیہ پر اعتماد بڑھے گا اور غریب کے احساس محرومی میں کمی آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ عام آدمی سمجھتا ہے کہ انصاف صرف پیسے والے اور طاقتور کو ملتا ہے ، اس تاثر کو انصاف کے بول بالا کے ذریعے عدلیہ دور کر سکتی ہے۔ ہر غریب آدمی جو کسی نہ کسی طاقتور کے ظلم کا شکار ہے وہ انصاف کے لیے صرف عدلیہ کی طرف دیکھ رہا ہے۔
پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات نوراللہ صدیقی ،مستغیث جواد حامد ،شمالی پنجاب کے صدر قاضی شفیق ، نعیم الدین چودھری ایڈووکیٹ و دیگر رہنمائوں نے اسیر عبدالحمید کے والد کے انتقال پر دلی افسوس کاا ظہار کیا ہے اور مرحوم کی بخشش کے لیے دعا کی ہی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.