49

بنوسی لہجہ پشتو کا ایک پیارا لہجہ (بنوں ٹیلینٹ)

بنوسی لہجہ پشتو کا ایک پیارا لہجہ ہے۔ اسکی تاریخی پس منظر ہے۔ بنوسی پشتو سے ہمیں جنم جنم پیار ہے اسلئے کہ یہ وہ پیاری زبان ہے جو ہمیں ماں کی گود میں سکھائی گئی ہے۔ جب بھی بنوسی زبان میں کوئی لیٹریچر ،ڈرامہ یا خاکہ دیکھنے یا سننے کو ملتا ہے دل کو سکون و قرار ملتا ہے۔ دو تین سال قبل سعودیہ سے چھٹی پر آیا تو کسی نے عارف دانش صاحب کی ہدایت کاری میں بنا پشتو مزاحیہ ڈرامہ ” گلاپے ڈونڈہ” پکڑوایا۔ پہلے تو یقین نہیں تھا کہ اتنا معیاری ڈرامہ ہوگا لیکن جب دیکھ لیا تو بے حد پسند آیا۔ اسی طرح دانش صاحب کی ایک اور کاوش مجھے بے حد پسند ہوئی۔ انہوں نے بنوں میں متاثرین کے بارے میں ایک چھوٹا سا ڈرامہ بنایا جو دل کو چھو جانے والا تھا۔ اس میں مزاح کا عنصر بھی شامل تھا اور سبق آموز بھی تھا۔ ڈرامہ کا خاص مقصد وزیرستان و بنوں کے عوام میں پیار و محبت اور یک جہتی کو بڑھانا تھا۔ میرے خیال میں یہ ایک کامیاب کاوش تھی۔ کچھ ماہ پہلے فیس بک ٹاپک پر دانش صاحب نے ایک بہترین ڈرامہ بنایا تھا جو دیدنی تھا۔ میں نے کئی بار وہ ڈرامہ دیکھا بار بار دیکھا لیکن ابھی تک جی نہیں بھرا۔ کامیاب ہدایت کاری کا سلسلہ جاری تھا کہ اچانک دانش صاحب نے ڈرامے چھوڑنے کا اعلان کیا۔ خود بھی ڈرامہ بنانا چھوڑا اور دوستوں سے بھی چھڑوایا۔ مجھے اسکے اس اقدام پر دکھ ہوا اور اسے کئی بار دوبارہ ڈرامے بنانے کے لئے بطور ایک فین درخواست کی لیکن اسکا دلیل مضبوط تھا کہ نہیں ایسا کام جس میں معمولی گناہ کا عنصر ہو میں نہیں کر سکتا۔

دانش صاحب Creative Minded شخصیت ہے اور میڈیا کے درست استعمال سے زبردست واقفیت رکھتے ہیں۔ اسلئے انہوں نے ڈرامے کا متبادل ڈھونڈ نکالا۔ انہوں نے ” بنوں ٹیلینٹ ” کے نام سے پیج بنا کر بنوں میں نئی Creativity کے لئے اپنے رخ موڑ دیا۔ اس پیج کو ابھی ایک مہینہ نہیں گذرا لیکن بنوں کے ٹیلنٹ کے حوالے سے زبردست مواد اپنے فالوور سے شیئر کیا گیا۔ جس سے اس پیج کو عوامی پزیرائی ملی۔ میڈیا کے اس دور میں مارکیٹ اوپن ہے۔آپ نے اس پیج کے ذریعے بنوں کے مسائل، بنوں کے ٹیلنٹ اور بنوں میں ایسی سرگرمیوں کو ابھارنا ہے جن سے کسی نہ کسی طریقے سے بنوں عوام کو فائدہ ہو۔ اچھے آئیڈیاز دانش صاحب کے ساتھ شیئر کئے جا سکتے ہیں۔ اس پیج کو بہترین پروفیشنل انداز میں چلانا دانش صاحب کا مشن ہے۔ دانش صاحب ایک کھلے دل والا، سادہ مزاج اور بنوں کا درد رکھنے والا ملنسار انسان ہے۔ اس کے پیج کو پروموٹ کرنے میں اور بنوں میں تعمیر و ترقی میں اسکا ہاتھ بٹھانا ہمارا فرض بنتا ہے اور دانش صاحب کا حق۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.