25

این ٹی ایس ٹیسٹوں کے خلاف بنوں میں احتجاجی مظاہرہ

دی بنوں – اساتذہ کی بھرتیوں کیلئے منعقدہ این ٹی ایس ٹیسٹ کے امیدواروں نے پرچہ جات آوٹ ہونے کے خلاف پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا ہے۔ حالیہ این ٹی ایس امتحانات شفاف نہیں منسوخ کئے جائیں۔
گزشتہ روز این ٹی ایس کے تحت اساتذہ کی بھرتیوں کیلئے منعقدہ امتحانات کے اُمیدواروں نے بنوں پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان اورخیبر پختونخوا حکومت نے دعویٰ کیا تھا کہ نیشنل ٹیسٹنگ سروس کے ذریعے شفاف امتحانات کا انعقاد اور میرٹ پر مبنی بھرتیاں کی جائینگی لیکن یہاں پر حالیہ اساتذہ کی بھرتیوں کیلئے منعقدہ امتحانات میں سنگین قسم کی بد عنوانیاں سامنے آئی ہیں۔
امتحان شروع ہونے سے قبل پرچہ جات آوٹ ہوجاتے ہیں اور لاکھوں روپے کے عوض وہ پرچے اُمیدواروں کو فروخت کر دیئے جاتے ہیں جس کے باعث محنت کرنے والے اُمیدوار وں کی حق تلفی ہو جاتی ہے کیونکہ بازاروں سے پرچہ جات خرید کر لانے والے اُمیدوارنقل کے ذریعے سے امتحان میں پاس ہو جاتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ این ٹی ایس کی تاریخ میں 60سے 70نمبرات سے زائد نمبرات کسی بھی اُمیدوار نے حاصل نہیں کئے ہیں ۔حالیہ امتحانات میں 90سے زائد نمبرات اُمیدواروں کو دیئے گئے ہیں جو کہ بد عنوانی کی زندہ مثال ہے کیونکہ وہ اُمیدواروان الف ،ب ،ج سے واقف نہیں اور اسی طرح میرٹ کی دھجیاں اُ ڑ ا دی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ فوری طور پر تمام کیڈرز کے امتحانات کو منسوخ کرکے نئے سرے سے شفاف طریقے سے امتحانات کا انعقاد کیا جائے بصورت دیگر ہم بھر پور احتجاجی تحریک شروع کریں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں