87

ایم ایم اے کا قیام سیکولر جماعتوں کیلئے موت کا پیغام ہے: درانی

وفاقی وزیر ہاؤسنگ اینڈ ورکس اکرم خان درانی نے کہا ہے کہ ایم ایم اے کا عام انتخابات میں ایک انتخابی نشان پر اتفاق ہوگا جو سیکولر جماعتوں کیلئے موت کا پیغام ہے ۔مخالفین ایم ایم اے بحالی پرپریشانی کا شکار ہوگئے ہیں۔ 2018کے عام انتخابات میں تحریک انصاف سمیت دیگر سیکولر جماعتوں کا آخری الیکشن ثابت ہوگا۔ موجودہ صوبائی حکومت تاریخ میں ناکام ترین حکومت کے نام سے یاد کی جائیگی ہے۔ جنہوں نے حکومتی نظام ساڑھے چار سال این جی اوز کے ذریعے چلایا۔ مغربی ایجنڈے کا پرچار کرنے والے غیر ملکی ایجنڈے کی تکمیل کیلئے ملک کے اندر سیاسی نظام کے خلاف کام کررہے ہیں جو جمہوری اقدار کے منافی ہے۔ عوام ملک دشمن اور اداروں کی تذلیل کرنے والوں کو عام انتخابات میں مسترد کریگی کیونکہ جو شخص اپنے گھر میں تبدیلی نہ لاسکے وہ ملک میں کیا تبدیلی لائیگا۔ ہمارے آبا واجداد کی زندگی کی تاریخ قربانیوں سے عبارت ہے جس محاذ پر کھڑے تھے آج بھی وہیں پر کھڑے ہیں ۔جو مولانا فضل الرحمن اور علماء کرام سے محبت کی دلیل ہے ۔بنوں کی تعمیروترقی سمیت یہاں کے حقوق کیلئے خون کے آخری قطرہ تک بہا دینگے مگر حقوق پر سمجھوتہ ایمان سے غداری سمجھتا ہوں۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز دورہ بنوں کے موقع پر اپنی رہائش گاہ پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر اُمیدوار پی کے80زاہد خان درانی اقوم عیسکی قبائل کے سربراہ ملک شکیل خان ،اقوام بنوں کے رہنما ملک یوسف اللہ خان ،سابق اُمیدوار صوبائی اسمبلی ملک عدنان خان سمیت دیگر پارٹی عہدیدار اور مشران بھی موجود تھے ۔انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے کی دوبارہ بحالی ملکی ترقی اور اسلام کی بقاء کیلئے سنگ میل حیثیت رکھتا ہے ۔متحدہ مجلس عمل کی طاقت سے اس بار سیکولر جماعتوں کا صفایا کرینگے ۔ایم ایم اے بحالی کا سن کر خیبر پختونخوا حکومت کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک پر سکتہ طاری ہوچکا ہے۔ اُن کو پتہ چل چکا ہے کہ آنے والا دور علماء کرام کا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے وطن کی تحفظ اور قوم کے حقوق کے تحفظ کی قسم کھائی ہے۔ اب بنوں کے تمام مخالفین ملکر بھی ہمارا مقابلہ نہیں کرسکتے کیونکہ اُن کو اپنی حیثیت کا مکمل اندازہ ہوگیا ۔کئی بار شکست دینے سے اُن کے حوصلے مکمل طور پر ختم ہوچکے ہیں ۔اب صرف جعلی اعلانات سے قوم کو دھوکہ دے رہے ہیں عملی طور پر قوم کیلئے کچھ نہیں کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.