103

’اقتصادی راہداری ہماری خوشحالی کا منصوبہ ہے‘

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اقتصادی راہداری ہماری خوشحالی کا منصوبہ ہے، گوادر بندرگاہ چینی کمپنیوں کے لیے لاگت کم کرے گی۔ بیجنگ میں دوسرے بیلٹ اینڈ روڈ فورم پر لیڈرز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان کی خوش قسمتی ہے کہ وہ چین کا شراکت دارہے، خطے کی خوشحالی سے مسائل کا حل ممکن ہو سکے گا۔

عمران خان کا کہنا ہے کہ بیلٹ اینڈ روڈ وژن سے رکاوٹیں ختم ہوں گی اورعوام قریب آئیں گے، نئی بندرگاہ خطے بلکہ براعظموں کو ملائے گی، گوادر بندرگاہ سنکیانگ سے چینی اشیاء کی ترسیل کے لیے مختصر راستہ ہے۔

گول میز کانفرنس سے خطاب میں وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کی خوش قسمتی ہے کہ ہم چین کے شراکت دار ہیں، سی پیک مختلف منصوبوں کا مجموعہ ہےجس میں شاہراہیں، ریل، توانائی اوردیگر منصوبے شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت پاکستان ہائی ویز ،ریل، روڈز کو جدید بنا رہا ہے، پاورپلانٹس، بندر گاہ اور خصوصی اقتصادی زونز بھی بنائے جا رہے ہیں۔

اس موقع پر وزیر اعظم نے تجویز دی کہ صنعت کاروں اور صارفین میں روابط کے لیے کثیر اللسانی ڈیجیٹیل پلیٹ فارم بنایا جائے،افرادی قوت کی تربیت کے لیے پروگرام ترتیب دیے جائیں، ثقافت و سیاحت کے تبادلوں کے لیے بیلٹ اینڈ روڈ سیاحتی راہداری بنائی جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جدید دور میں چین کامیابی کی عظیم مثال ہے، چین میں پائیدار معیشت و معاشرتی ترقی سے کروڑوں لوگوں کا معیار زندگی بہتر ہوا،عظیم ترقی چینی قیادت کے وژن اور عوام کی سخت محنت کا نتیجہ ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے صدر شی جن پنگ اور چینی حکومت کا بہترین میزبانی پر شکریہ بھی ادا کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.