48

بنوں کے عوام کوبنیادی حقوق دیئے جائے: پشاور ہائی کورٹ کافیصلہ

پشاور ہائی کورٹ بنوں بینچ نے 28 فروری کو ضلعی انتظامیہ سے شہر میں گاڑیوں کی پارکنگ کے جگہ کے تعین ، فٹ پاتھ وغیرہ کی تعمیر کے حوالے سے مفصل رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا.
پشاور ہائی کورٹ بنوں بینچ میں میاں حمود الرحمن نے درخواست دائر کی تھی کہ موٹر وہیکل آرڈیننس 1965 ء اور موٹر وہیکل رولز 1969 کے سیکشن 3 ، 4 ، 78 ، 79 اور سیکشن 80 کے تحت شہریوں کو درج ذیل بنیادی حقوق حاصل ہیں شہر میں گاڑیوں کی پارکنگ کی سہولت فراہم کرنا ، راہگیروں ، پیدل چلنے والوں کیلئے فٹ پاتھ تعمیر کرنا ، بس ویگن سٹاپس کیلئے جگہ مختص کرنا ، دھوپ وبارش سے بچنے کیلئے شیڈ وغیرہ بنانا ، غیر رجسٹرڈ شدہ گاڑیوں کو کنٹرول کرنا اور کم سن ڈرائیوروں پر پابندی لگانا وغیرہ شامل ہے اُنہوں نے بحث کے دوران وضاحت کی ہے کہ آئین کی رو سے اداروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ افراد یعنی شہریوں کی سلامتی ، شہریوں کو اعلیٰ طرز زندگی ، نقل وحرکت میں آزادی ، شہریوں سے مساوات کی بنیاد پر سہولیات فراہم کریں جبکہ بنوں میں یہ سہولیات ناپید ہیں سماعت کے دوران مختلف محکموں کے اہلکار بھی موجود تھے ضلعی انتظامیہ کے اہلکار نے عدالت کو بتایا کہ اس سلسلے میں ضلعی انتظامیہ کا اعلیٰ سطح اجلاس ہوچکا ہے جس میں یہ تمام ایشوز زیر غور لائے گئے ہیں جس پر عدالت نے حکم جاری کیا مفاد عامہ کے اس انتہائی اہمیت کے حامل مقدمہ کی بابت آئندہ پیشی 28 فروری 2018 ء کو تفصیلی رپورٹ پیش کرے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.